ايک صحت بخش غذا کيوں اہم ہے؟

يہ معلومات اس کے متعلق ہے کہ کس طرح اچها کهايا جائے اور موزوں وزن کو قابو ميں رکها جائے۔اس ميں يہ وضاحت کی گئی ہے کہ صحت بخش غذا کيوں اہم ہے۔ صحت بخش غذا کے بارے ميں ايک رہنماء بهی موجود ہےجس ميں غذاوں کی مختلف اقسام کی وضاحت موجود ہے  کہ ايک صحتبخش غذا ہوتی کيا ہے۔

اس معلومات ميں درج ذيل پر روشنی ڈالی گئی ہے
 ايک صحت بخش غذا کيوں اہم ہے
 اپنی غذا ميں تبديلياں لانا
 وه کام جو آپ کر سکتے ہيں
 رہنماء برائے صحت بخش غذا
 جسمانی سرگرمی

ايک صحت بخش غذا کيوں اہم ہے
صحت بخش غذا کهانا ايک ايسا بہترين کام ہے جو آپ اپنی صحت کے ليے کر سکتے ہيں۔ اس سے آپ کولاحق درج ذيل خطرات ميں کمی آ جائے گی۔
 کينسر
 دل کی بيماری
 فالج
 ذيابيطس۔
اگر آپ کو پہلے سے کينسر ہو چکا ہے، تو صحت بخش غذا کهانے سے نئے کينسر کے خطره ميں کمی آجائے گی۔

ايک صحت بخش غذا سے آپ کو درج ذيل فوائد بهی حاصل ہوں گے:۔
ايک موزوں وزن برقرار رکهنے ميں آپ کو مدد ملے گی
 آپ کو مضبوط بنائے گی
 آپ کو زياده توانائی دے گی
 بہتر محسوس کرنے ميں آپ کی مدد کرے گی۔

ان کے ليے جن کا وزن سفارش کرده وزن سے کہيں زياده ہے:۔
 کئی لوگوں کا وزن، قد کے حساب سے کينسر کے بعض علاج مثلا ہارمونی تهراپياں يا اسٹیرائيڈز وزن ميں اضافے کا سبب بن سکتے ہيں۔
وزن زياده ہونے کی وجہ سے کئی اقسام کے کينسر ہونے کا خطره بڑه جاتا ہے، بشمول لبلبہ، آنتيں،گردے، رحم اور نرخرے (ہوا کی نالی) کا کينسر۔ ايسی خواتين جن کا وزن زياده ہو اور وه حيض کی دائمیبندش سے گزر رہی ہوں، تو انہيں چهاتی کا کينسر ہونے کا بہت زياده خطره لاحق ہوتا ہے۔اپنے قد کے حساب سے اپنے وزن کو متناسب رکهنے کی کوشش کريں۔ آپ کا جی پی يا  نرس آپکو بتا سکتی ہے کہ آپ کا موزوں وزن کتنا ہونا چاہيے۔ اگر آپ اپنے وزن سے پريشان ہوں، تو اپنے جیپی يا ماہر غذا سے مشوره ليں۔

اپنی غذا ميں تبديلياں لانا
اپنی غذا ميں بتدريج تبديلياں لانے کا عمل آسان ہو سکتا ہے۔
عام طور پر آپ جو کچھ کهاتے ہيں، اسے چند ہفتوں تک لکهنے کی کوشش کريں اور پهراس کا موازنہ آپصحت بخش غذا کی معلومات کے ساتھ کر سکتے ہيں۔ اس کے بعد آپ اپنے ليے چند چهوڻے اہداف مقررکر سکتے ہيں۔

اگر آپ نے اس سے پہلے ناشتے ميں کبهی پهل نہيں کهائے، تو اب آپ کهانے کی کوشش کر سکتے ہيں۔
اسنيکس ميں چاکليٹ يا چپس کهانے کی بجائے آپ خشک ميوه جات اور گری دار ميوے کهانے کی کوششکر سکتے ہيں۔
اس بات پر دهيان رکهيں کہ آپ کيا کهاتے ہيں اور اس سے کيسا محسوس کرتے ہيں، جسمانی اور جذباتیلحاظ سے۔ تبديلياں پُر لطف بهی ہو سکتی ہيں۔ آپ ايسی غذائيں بهی دريافت کر سکتے ہيں، جن کو شايد آپنے پہلےنہ آزمايا ہو۔

اپنی غذا ميں کسی قسم کی تبديلی کرنے سے پہلے، اپنے جی پی سے بات کر لينا مفيد ثابت ہو سکتا ہے۔

اگر آپ کو کينسر ہوا ہے
اگر آپ کينسر اور اس کے علاج کے ساتھ نمٹ رہے ہيں، تو اپنی غذا ميں تبديلياں لانا آپ کے ليے مشکلہو سکتا ہے۔

کئی لوگوں کو محسوس ہوتا ہے کہ اپنی غذا ميں مثبت تبديلياں لانے کی وجہ سے انہيں زياده کنٹرول اورمثبت احساس حاصل ہوتا ہے۔ اس کی وجہ سے آپ کی طاقت اور توانائی ميں بہتری آ سکتی ہے اور آپٴ کے ذہنی دباو ميں بهی کمی واقع ہو سکتی ہے۔

کينسر کے علاج کے بعد، کئی لوگوں کو صحت کے ديگر مسائل بهی درپيش ہو سکتے ہيں، مثلا ذيابيطسدل کی بيماری يا آسٹیوپروسس (ہڈيوں کا پتلا ہونا)۔ اگر ان ميں سے کوئی خطره آپ کو لاحق ہو، تو اسسے بچنے کے ليے، صحت بخش غذا کا استعمال خاص طور پر اہم ہو گا۔
اپنی غذا کے بارے ميں اپنے ڈاکٹر يا نرس سے بات کريں۔ وه آپ کو کسی ماہر غذا کی جانب بهيج سکتےہيں، جو آپ کو ماہرانہ مشوره دے سکتا ہے۔

وه کام جو آپ کر سکتے ہيں
آپ کا جی پی يا ماہر غذا آپ کو غذاوں کی مناسب مقداروں کے بارے ميں بتا سکتے ہيں۔
 صرف اتنی غذا کهائيں، جتنی آپ کو ضرورت ہو۔

 ايسی صحت بخش غذا کهائيں جس ميں پهل اور سبزياں کافی مقدار ميں شامل ہوں، مگر چربی اورچينی کی مقدار کم ہو – ذيل ميں ديا گيا صحت بخش غذا کا رہنماء ملاحظہ کريں۔
 جسمانی طور پر زياده فعال رہيں۔
 آپ جو کهاتے ہيں اسے ڈائری ميں نوٹ کريں، تاکہ يہ ديکھ سکيں کہ بہترياں کہاں پر لائی جا سکتیہيں۔

رہنماء برائے صحت بخش غذا
زياده تر لوگوں کے ليے، صحت بخش غذا درج ذيل چيزوں پر مشتمل ہو سکتی ہے

 پهل اور سبزياں – وٹامنز، معدنيات اور ريشوں کا ايک اچها ذريعہ۔
 نشاستہ دار غذائيں (کاربوہائيڈريٹس) – توانائی، ريشوں، فولاد اور بی وٹامنز کا ايک اچها ذريعہ۔
غذاو ں ميں شامل ہيں روٹی، چاول، پاستہ، نوڈلز، کاوسکاوس اور آلو۔
 ريشہ دار غذائيں – ہماری آنتوں کو صحت مند رکهتی ہيں اور قبض سے بچاتی ہيں۔ مختلف اقسام کیبراون رائس، جئی، پهلياں، مٹر، داليں، غلہ، بيج، پهل اور سبزياں۔ريشوں سے بهرپور غذائيں کهانے کی کوشش کريں۔ غذاوں ميں شامل ہيں بهورے آٹے کی روٹی،• پروٹين – آپ کے جسم کو اپنے افعال کی ادائيگی، نشوونما اور خليوں کی مرمت کے ليے پروٹين درکارہو ہوتی ہے۔ غذ ں ميں شامل ہيں گوشت، پولٹری، مچهلی، گری دار ميوے، انڈے اور داليں(پهلياں اورداليں)۔

 چربی والی غذائيں – آپ کو اپنی غذا ميں چربی کی ايک تهوڑی مقدار درکار ہوتی ہے۔ سيرشده لحميات(مثلا ڈيری، چپس، پيسڻريوں) کی بجائے غير سير شده لحميات (مثلا گری دار ميوے يا ناشپاتی) کاانتخاب اہم ہے۔ تلی ہوئی اشياء اور چربی والا گوشت کم مقدار ميں استعمال کريں۔ کم چربی والی ڈيریمصنوعات کا انتخاب کريں اور مرغی يا مچهلی کو جلد کے بغير استعمال کريں۔

ايک متوازن غذا
درج ذيل  ميں دکهايا گيا ہے کہ آپ کی غذا ميں ہر غذا کتنی مقدار ميں شامل ہونی چاہيے۔ مثال کےطور پر، آپ جو کچھ بهی کهاتے ہيں اس کا ايک تہائی حصہ پهلوں اور سبزيوں پر مشتمل ہونا چاہيے۔
نمک
ايسی غذائيں جن ميں نمک کی مقدار زياده ہو، معدے کے کينسر کے خطره ميں اضافہ کا باعث بن سکتیہيں۔ کهانے ميں نمک کی مقدار کم کرنے سے بلڈ پريشر، دل کی بيماری اور فالج کے خطره ميں کمی لائیجا سکتی ہے۔ بالغان کے ليے نمک کی زياده سے زياده سفارش کرده مقدار ايک دن ميں 6 گرام ہے جوتقريبا ايک چائے کے چمچ کے برابر ہے۔

 کوشش کريں کہ آپ کے کهانے ميں نمک شامل نہ ہو۔
 نمک کی بجائے ذائقے کے ليے جڑی بوٹياں، مصالحے يا کالی مرچ استعمال کريں۔
 گوشت اور مچهلی کو زياده ذائقہ دار بنانے کے ليے پکانے سے پہلے ميرينيٹ کريں۔
چينی
چينی توانائی کا ايک اچها ذريعہ ہے اور پهلوں اور دوده جيسی چيزوں ميں يہ قدرتی طور پر پائی جاتیہے۔ مگر مٹهائيوں، بسکٹوں، کيکس، پيسٹريوں اور پڈنگ جيسی اشياء ميں بہت زياده اضافی چينی موجودہوتی ہے جس سے عمومی حالات ميں گريز کيا جانا چاہيے۔ فزی ڈرنکس اور الکحل ميں بهی اکثر چينی کیمشروبات ميں کمی لانا، بے حد اہم ہے۔ ٴ بڑی مقدار موجود ہوتی ہے۔ وزن گهٹانے کی کوشش کرتے وقت اضافی چينی کی حامل غذاوں اورالکحل

نشاستہ دار غذائيں – %33
پهل اور سبزياں سبزياں – %33
دوده اور ڈيری اشياء – %15
پروٹين – %12
چکنائی، نمک يا چينی – %7

جسمانی سرگرمی
صحت مند وزن برقرار رکهنے کے ليے چست رہنا بهی ضروری ہے۔ چست رہنے کا مطلب ہميشہ سختورزش نہيں ہوتا۔ يہ کچھ دير کے ليے چلنے يا باغبانی کرنے کی طرح کوئی ساده کام بهی ہو سکتا ہے۔
اپنی طاقت ميں بتدريج اضافہ کے ساتھ، آپ کسی ايسی سرگرمی کا انتخاب کر سکتے ہيں جس سے آپلطف اندوز ہوتے ہوں۔ چلنا، کودنا،  تيرنا اور سائيکل چلانا ايسی کئی سرگرميوں ميں شامل ہيں جو آپکو صحت مند اور تن درست بننے ميں مدد ديں گی۔
بالغان کو درج ذيل چيزيں کرنے کا مشوره ديا جاتا ہے
ہر ہفتے ڈهائی گهنٹے (150 منٹ) کی جسمانی سرگرمی۔
اسے اس طرح تقسيم کيا جا سکتا ہے:۔
 ہفتے کے پانچ دن 30 منٹ کی جسمانی سرگرمی۔
يا
 ہفتے کے پانچ روز، دن ميں تين مرتبہ 10 منٹ کی جسمانی سرگرمی۔

زياده ورزش شروع کرنے کے حوالے سے اگر آپ کے پاس کوئی سوالات ہيں، تو آپ اپنے ڈاکٹر سے باتکر سکتے ہيں۔

https://www.macmillan.org.uk/_images/Healthy-eating_Urdu_tcm9-275878.pdf

291total visits,2visits today

Leave a Reply

Your email address will not be published.